16

نریندر مودی گجرات قتل عام میں براہ راست ملوث ہے، سابق برطانوی سیکرٹری خارجہ

لندن(کے ین این) سابق برطانوی سیکرٹری خارجہ نے نریندر مودی کو براہ راست گجرات قتل عام کا ذمہ دار قرار دے دیا۔

سابق برطانوی سیکرٹری خارجہ جیک سٹرا نے تصدیق گزشتہ دنوں بی بی سی کی دستاویزی رپورٹ میں کی، جیک سٹرا نے کہا کہ گجرات نسلی فسادات پر 2002ء کی ٹونی بلئیر حکومت نے غیر معمولی تحقیقات کرائیں تھیں، تحقیقات برطانیہ میں قابل ذکر گجراتی نژاد مسلمانوں کے دباؤ پر کرائی گئی تھیں۔

سابق برطانوی سیکرٹری خارجہ نے کہا کہ برطانیہ میں موجود ہزاروں گجراتی مسلمانوں کے نسل کشی پر شدید تحفظات تھے، 2002ء میں بھارت میں برطانوی ہائی کمیشن نے غیر معمولی تحقیقات کے بعد رپورٹ برطانوی وزارت خارجہ کو بھجوائی، جس میں مودی کو گجرات کے فسادات کا ذمہ دار قرار دیا گیا۔

جیک سٹرا نے کہا رپورٹ میں مودی کو نسلی قتل عام و فسادات کا ہال مارک قرار دیا گیا تھا، بھارتی وزیر اعظم کی 27 فروری کو سینئر پولیس حکام سے ملاقات کا انکشاف بھی کیا گیا، ملاقات میں مودی نے پولیس افسران کو فسادات میں مداخلت سے روکا تھا، رپورٹ ملنے کے بعد اس وقت کی واجپائی حکومت اور بھارتی وزیر خارجہ جسونت سنگھ سے رابطے کئے۔

دوسری جانب بھارتی وزارت خارجہ نے بی بی سی کی دستاویزی رپورٹ کو پروپیگینڈا قرار دیا ہے، وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری نے بھی حالیہ اقوام متحدہ کانفرنس میں مودی کو گجرات کا قصائی قرار دیا تھا، بھارتی رہنما اسدر الدین اویسی نے بھی رپورٹ پر مودی کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔

واضح رہے بھارت کے موجودہ وزیر اعظم نریندر مودی گجرات میں مسلم کش فسادات کے دوران وزیر اعلیٰ تھے، ان کی سرپرستی میں گجرات کے مسلم کش فسادات میں ہزاروں مسلمانوں کا قتل عام کیا گیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں