48

بجلی بلزپرریلیف کی امید معدوم ہو گئی،آئی ایم ایف نے نئی شرائط رکھ دیں

اسلام آباد(روزنامہ استحکام)بجلی کے بلوں میں ریلیف ملنے کی امید معدوم ہوگئی، آئی ایم ایف نے نئی شرائط رکھ دیں ۔ذرائع وزارت خزانہ نے بتایا ہے کہ آئی ایم ایف نے مطالبہ کیا ہے کہ خود بجلی پیدا کرنے والی صنعتوں کے لیے رعایتی ٹیرف ختم کیا جائے اوربجلی چوری اور لائن لاسز پر کنٹرول یقینی بنایا جائے ۔ذرائع نے بتایا کہ بجلی تقسیم کار کمپنیوں کی کارکردگی پر بھی سوالات اٹھا ئے گئے ہیں ۔وزارت خزانہ ذرائع نے مزید بتایا کہ آئی ایم ایف سے بات چیت میں ابھی تک پیش رفت نہیں ہوسکی۔ آئی ایم ایف نے ریلیف کی تجاویز پر بھی وقت مانگا ہے۔ذرائع کے مطابق جو صنعتی یونٹس گیس استعمال کرتے ہیں ان کیلیے جولائی اور اگست کے بلز میں پچاس فیصد تک اضافہ کیاجائے۔آئی ایم ایف نے وزارتِ خزانہ کو ہدایت کی کہ صارفین کو ریلیف دینے کیلئے پاور سیکٹر کا نظام درست کیا جائے۔یاد رہے کہ اس سے قبل نگران وزیر توانائی محمد علی نے کہا کہ بجلی بلوں میں ریلیف کیلئے آئی ایم ایف کو پلان بھیجا گیا،آئی ایم ایف کی جانب سے بجلی بلوں پر ریلیف کا جواب ایک 2 دنوں میں آ جائے گا۔ سردیوں میں گیس کی کمی کے باعث صنعتیں بند نہیں ہونی چاہئیں،صنعتوں کو گیس کی فراہمی کیلئے ایل این جی پلانٹس لگانا ہوں گے۔ محمد علی کا کہنا تھا کہ گیس سیکٹر میں سالانہ 3 ارب روپے کا نقصان ہو رہا ہے،گیس کے نئے ذخائر کی تلاش کا کام رک گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ گردشی قرضہ زیادہ ہو گیا ہے،کئی کمپنیاں ملک چھوڑ کر چلی گئی ہیں۔ نگران وزیرِ توانائی کا کہنا تھا کہ گردشی قرضہ کم کرنے کیلئے اقدامات کئے جا رہے ہیں،ڈسکوز کے بورڈز کو غیر سیاسی بنانے پر بات ہوئی،گیس سیکٹر میں خرابیوں کو دور کرنے کیلئے اقدامات کا جائزہ لیا گیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں